Breaking News

غلطی نہیں گہری سازش


امتیاز علی شاکر

سینٹ اورقومی اسمبلی سے منظورہونے والے الیکشن ایکٹ 2017ء کے اندرختم نبوت ﷺ پرہونے والے حملے میں حکمران طبقے کی گہری سازش کے حوالے سے جیسے جیسے حقائق سامنے آرہے ہیں۔جیسے جیسے قوم ان کی گہری سازش کے تانے بانے سمجھتی جارہی ہے ویسے ویسے قوم کے سرشرم سے جھکتے جارہے ہیں۔مسلمان ختم نبوت ﷺ کیخلاف اپنے ہی ملک کے حکمرانوں کی سازش بے نقاب ہونے پرشدید کرب کاشکارہیں۔ مسلمانوں کے اندرشدید غم و غصہ پایاجاتاہے۔شیخ رشید نے اسمبلی کے اندرصرف ختم نبوت ﷺ کے حلف نامہ کواقرارنامہ میں تبدیل کرنے پربات کی جبکہ سینٹ اورپھرقومی اسمبلی سے منظورہونے والے الیکشن ایکٹ 2017ء بل کے اندربدبخت حکمرانوں نے ہرجگہ سے ختم نبوت ﷺ والی شقیں نکال کرقادیانیوں کیلئے تمام ترراستے صاف کرنے کی ناپاک کوشش کی ہے تاکہ وہ پاکستان کے ایوانوں کے ممبربھی بن سکیں اوروزیربھی۔تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ پاکستان کے مطالبات میں7B.7Cایکشن ایکٹ میں شامل کرکے گزٹ آف پاکستان میں پبلش کروانابھی شامل ہے۔7Bاور7Cدونوں کے اندرقادیانیوں،احمدیوں اوران سے ملتے جلتے عقائد رکھنے والوں کے متعلق بڑی تفصیلی قانون سازی موجودہے جس کے اندرصاف لفظوں میں قادیانیوں کوکافراقلیت قراردیاگیا۔راقم نے گزشتہ کالم کے اندر 7Bاور7Cکامتن انگلش زبان میں شامل کیاتھا۔اکثریت انگلش پڑھنالکھنانہیں جانتی ۔لہٰذاآج تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ کے مرکزی رہنما ،مرشد سرکار،عظیم روحانی پیشواسید عرفان احمدشاہ المعروف نانگامست کے حکم کے مطابق آپ کے سامنے 7Bاور7Cکااردوترجمہ تفصیل کے ساتھ پیش کرکے نہ صرف اپنافرض اداکرنے کی کوشش کروگابلکہ ہرمسلمان خاص طورمسلمان ماہرین قانون و آئین پاکستان کودعوت دوں گاکہ اپنے حصے کام ضرور کریں تاکہ قادیانی عناصرپاکستان میں قادیانیت رائج نہ کرسکیں۔اس ترجمعہ میں مجھے ماہرقانون ،محمدعذیر ایڈووکیٹ صاحب کاانتہائی تعاون حاصل رہاجس کیلئے میں اُن کابے حد شکرگزارہوں کہ انہوں نے بڑی توجہ کے ساتھ قانونی الفاظ کاترجمعہ کیااوریہاں راقم محمدعذیرایڈووکیٹ کے رسول اللہْ ﷺ کے ساتھ انتہائی محبت بھرے جذبات کوبھی سلام پیش کرنے کے ساتھ دُعاگوہے کہ اللہ تعالیٰ راقم کی اور محمد عذیرایڈووکیٹ کی عاجزانہ حاضری قبول فرمائے:
7Bترجمعہ
احمدی،مرزائی اورلاہوری وغیرہ کی حیثیت وہی رہے گی باوجود اس کے انتخابی فہرست ایکٹ 1974ء انتخابی فہرست قوائد 1974ء یااورکوئی قانون جووقتی طورپرلاگوکیاگیاہوبشمول مشترکہ انتخابی (الیکشن)کیلئے مقررکردہ انتخابی فہرست فارم جومطابق سماعت عام انتخابات آڈر2002ء آرٹیکل 7(چیف ایگزیکٹوآڈرنمبر7۔2002ء )میں کیاہے۔قادیانی گروپ یالاہوری گروپ (جوخود کو احمدی یا کچھ اوربھی کہتے ہیں)کی حیثیت یاکوئی شخص جس کوختم نبوت ﷺ پرمکمل اورغیرمستحکم یقین نہیں یاحضرت محمد ﷺ کوآخری نبی نہیں مانتایاکسی بھی طریقے یاالفاظ کے ساتھ آپ ﷺ کے بعد نبی ہونے کادعویٰ کرے یادعویٰ کرچکاہو۔یاپھراس طرح کے کے دعوے کرنے والے کونبی یامذہبی اصلاحات کرنے والا تسلیم کرتاہوکی حیثیت وہی ہوگی جواسلامی جمہوریہ پاکستان کے آئین 1973ء کے اندر طے ہوچکی ہے
7cترجمعہ
اگرکسی شخص نے خودکوووٹرانداراج کیا اورریوائزنگ اتھارٹی میں سلسلہ عام انتخابات آڈر2002ء میں جاری ہونے سے دس دن کے اندراعتراض داخل کیاگیاکہ یہ ووٹرمسلمان نہیں توریوائزنگ اتھارٹی اس ووٹرکو15دن کے اندراندرحاضرہونے کیلئے نوٹس جاری کرے گی اوراس سے ایک بیان پردستخط کرنے کوکہے گی جوکہ ختم نبوت ﷺ پرمکمل اورغیرمستحکم یقین رکھنے کے متعلق ہوگا۔جوانتخابی فہرست قوائد 1974ء فارم ivکے تحت مقررکیاگیااگروہ شخص دستخط کرنے سے انکارکرے تواسے غیرمسلم سمجھاجائے گااوراس کانام مسلم انتخابی فہرست سے خارج کردیاجائے گااوراسے انتخابی عمل میں غیرمسلم کے طورپرووٹرزکی اقلیت فہرست میں شامل کیاجائے گا۔اگرووٹرنوٹس کے باوجودحاضرنہیں ہوگاتواس کیخلاف یکطرفہ آڈرجاری کیاجائے گا۔
آئین پاکستان انگلش زبان میں ہونے کی وجہ سے پاکستانی آبادی کی اکثریت اسے پڑھنے سے قاصرہے اورجوانگلش پڑھ سکتے ہیں اُن کیلئے بھی آئین پاکستان کے اندراستعمال انتہائی مشکل الفاط کوسمجھناخاصادشوارکام ہے ۔راقم نے اپنی پوری کوشش کی ہے کہ 7Bاور7Cکے اندرموجودقانون قوم کے سامنے رکھ سکوں ۔ حالات و واقعات کودیکھ اورآئین کے مطالعہ کے بعد واضع سمجھ آرہی ہے کہ الیکشن ایکٹ 2017ء میں 7Bاور7Cکوشامل نہ کرنااورپھرختم نبوت ﷺ کے حلف نامہ کواقرارنامہ میں تبدیل کرنااورپھروزیرقانون پنجاب راناثنااللہ کاقادیانیوں مسلم کہناکوئی غلطی نہیں بلکہ انتہائی گہری اوردانستہ سازش ہے۔یہاں یہ بتادینابھی ضروری سمجھتاہوں کہ حلف نامہ کواصل شکل میں بحال کرنے کیلئے جوقانون سازی کی گئی وہ بھی ابھی تک عملاً نافذ نہیں کئی گئی۔روزنامہ 92نیوزمیں شائع ہونے والی ایک رپورٹ میں بھی اس سازش کوبے نقاب کیاگیا۔تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ پاکستان کی قیادت اورمتحرک کارکن اس رپورٹ کوپڑھ چکے ہیں آج اُن قارئین کی توجہ کیلئے شامل اشاعت کرناچاہتاہوں جوابھی تک نہیں پڑھ سکے تاکہ وہ بھی حکومت کے کارناموں سے واقف ہوسکیں۔رانامحمد عظیم کی رپورٹ میں کہاگیاہے کہ دینی جماعتوں کی طرف سے ختم نبوت ﷺ کے آرٹیکل میں ترمیم کرنے والوں کیخلاف کارروائی اورانہیں بے نقاب کرنے کے مطالبے پراب تک عمل نہ ہونے کی حوالے سے اہم انکشافات ہوئے ہیں ۔باوثوق ذرائع کاکہناہے کہ ختم نبوت ﷺ کے قانون میں ترمیم کے حوالے سے وفاقی وزیرقانون زاہد حامد کانام سامنے آنے کے بعد تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ پاکستان اوردیگرمذہبی جماعتوں کی جانب سے زاہد حامد سے استعفیٰ لینے کامطالبہ پرعمل اس لئے نہیں ہوسکاکہ وفاقی وزیرقانون زاہدحامد نے واضح طورپرکہہ دیاکہ میری قربانی دی گئی توخاموش نہیں رہوں گا۔ن لیگ کے اندرایک بڑاحلقہ یہ چاہتاتھاکہ موصوف خوداستعفیٰ دے دیں ۔اوریہ کہاجائے کہ انہوں نے شفاف انکوائری کیلئے استعفیٰ دیاہے تاکہ ذمہ دارکاتعین ہوسکے۔باوثوق ذرائع کے مطابق اس تجویزکوبھی وزیرقانون نے نہ صرف ماننے سے انکارکردیابلکہ پیغام لے جانے والے اہم ن لیگی رہنما کوواضح طورپرکہاگیاکہ میں استعفیٰ دوں گانہ اس کاذمہ دارہوں۔جوجواس میں ملوث ہے وہ سب استعفیٰ دیں اورجس اعلی شخصیت کی مرضی سے سب کچھ ہورہاتھاوہ بھی ذمہ دارہے۔زاہد حامد کی اس دھمکی کے بعد ان سمیت تمام ذمہ داران کیخلاف نہ صرف کارروائی روکی گئی بلکہ اس حوالے سے رپورٹ کوبھی منظرعام پرنہیں لایاگیا۔باوثوق ذرائع کے مطابق قانون ختم نبوت ﷺ میں ترمیم کے حوالے سے شریف خاندان کی ایک اہم شخصیت کانام لیاجارہاہے جس کی مرضی سے یہ سب کچھ ہورہاتھا۔فیصل آباد لاہورسمیت دیگرشہروں میں تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ پاکستان اوردیگرمذہبی جماعتوں کے کارکنوں کی گرفتاری کے احکامات بھی رائیونڈ میں ہونے والے اجلاس میں دیئے گئے اورفیصلہ کیاگیاکہ کسی بھی صورت میں اس مطالبہ پرعمل کیاجائے گااور نہ ایسا کرنے والوں کومعاف کیاجائے گا۔لاہور،فیصل آباد اوردیگروشہروں میں گرفتاریاں اس لئے تیزکی گئیں تاکہ اسلام آباد میں دھرنہ دیئے افرادکوپیغام جائے کے اس کے بعد اُن کی باری ہے‘‘یہاں یہ بات واضح کردیناچاہتاہوں کہ تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ کی جانب سے زاہد حامد کے استعفیٰ کا نہیں بلکہ برطرفی کامطالبہ کیاگیاہے جس پرعملدرآمدسے قبل کسی قسم کے مذاکرات نہ کرنے کااعلان بھی کیاگیاہے۔راقم رسول اللہ ﷺ کی ساری اُمت کویہ پیغام دیناچاہتاہے کہ ختم نبوت ﷺ کے مسئلہ پرخاموش نہ رہیں اوراحتجاج میں تحریک لبیک یارسول اللہ ﷺ پاکستان کاساتھ دے کرختم نبوت ﷺ کے قانون کے ساتھ غداری کرنے والوں کامحاسبہ کریں

مزید کالم ، تجزیہ اور مضامین

تازہ کالم اور مضامین